Hesham A Syed

January 7, 2009

Self Realization

Filed under: Spiritual — Hesham A Syed @ 4:56 am
Tags:

Urdu Article / Anshaiya : Aagahy – Hesham Syed

  

آگہی 

وہ مجھے عبادت میں منہمک دیکھتا رہا ۔

اور پھر دبے قدموں آہستہ آہستہ چلتا ہوا میرے پاس آیا ۔ اور مجھ سے اپنی گھمبیر آواز میں کہنے لگا۔

تم کسے پوجتے ہو ؟ تمھارا خدا کون ہے ؟ وہ کہاں ہے ؟

تمھاری آنکھیں آسمان کو کیوں تکتی ہیں ؟ اور ان میں ویرانی سی کیوں ہے ؟

تمھارے چہرے پر تابانی کے بجائے افسردگی اور غیر یقینی کی کیفیت کیوں ہے ؟

تم اندر سے کھوکھلے کیوں ہو ؟ تمھارے اندر وحشت نے کیوں بسیرا کر رکھا ہے ؟

میںسر جھکائے دم بخود تھا ۔ میرے پاس ان سوالات کا جواب نہ تھا ۔ اور تھا بھی تو میں خود اپنے جواب سے مطمن نہ تھا !

          سو میں نے اپنی جھکی ہوئی نظریں اٹھائیں اور اس کے روشن چہرے کو دیکھا جس پہ بچوں جیسی معصومیت بکھری ہوئی تھی۔لیکن اس کی آنکھوں میں ایک عجیب سی کشش تھی۔ گہری سیاہ کہ بھوری کہ نیلگوں آنکھیں ۔ ان میںایک ہی وقت میں کئی رنگ کی چمک تھی ۔یہ ملا جلا رنگ اور یہ کہکشاں آنکھیں شاید اس کے اندر کے چھپے سمندر کی عکاسی کرتی تھیں۔

کیا تمھارا خدا نہیں ؟ تمہیں نہیں معلوم وہ کہاں رہتا ہے ؟ میں نے پلٹ کے اس سے سوال کیا !

ہاں ہے ! مجھے یہ بھی معلوم ہے کہ وہ کہاں رہتا ہے ! میں اپنے خدا سے روز اور ہر لمحہ باتیں کرتا ہوں۔۔!

تم بھی۔۔ ہاں تم بھی۔۔ اپنے اندر جھانکو ۔ وہ تمہیں مل جائے گا  ۔!!

یہ کہہ  کے  وہ  ایک سمت چل پڑا ۔۔۔

اور مجھے ایسا لگا جیسے کسی نے میرے اندر ایک سورج سا روشن کردیا ۔ میں روشنی کے اس سیلاب میں بہنے لگا۔

میرے ہوش و حواس پہ بجلی چمک رہی تھی مگر حد نگاہ تک آسمان تاریک ہو چکا تھا۔

میں اپنے صحیفہ ادراک کے سیاہ ورق پلٹ رہا ہوں ۔ میرے بدن پہ ایک لرزہ سا طاری ہے ۔

شعور ِذات کی آگ دہک رہی ہے اور اس آگ میں میری انا کا سیاہ مجسمہ موم کی طرح پگھل رہا ہے۔

مجھے بہت کچھ کرنا ہے ۔ اپنی بقائے دوام کی خاطر ۔ اپنی لقائے دوام کی خاطر !

میں خودسے ہمکلام ہوں ۔۔ اے مرے پیارے خدا ۔۔ اے میرے روشن وجود !

میرے کان اس صدائے  بازگشت کو سن رہے ہیں  :

ہم ہر لمحہ تمھارے ساتھ ہیں ۔ تم جہاں کہیں بھی کیوں نہ ہو! (القران)

ہم تمھاری شہ رگ سے بھی زیادہ قریب ہیں ۔ افسوس تمہیں اس کا شعور نہیں ! (القران)

میرا دل کیوں بینا ہوگیا۔۔ میری آنکھوں میں بھی کہکشاں کیوں پھوٹنے لگی !

کیا میں نے اپنے آپ کو پالیا … یا اپنے خدا کو پا لیا ؟

حشام احمد سی

 

Advertisements

Leave a Comment »

No comments yet.

RSS feed for comments on this post. TrackBack URI

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: